کاروبار پیسے بنانے کیلئے نہیں کر رہا،’ ایم ٹی جے‘برانڈ کی آمدنی فاؤنڈیشن کیلئے خرچ کی جائے گی، مولاناطارق جمیل

       

لاہور: معروف مذہبی مبلغ مولانا طارق جمیل نے اپنے نام سے شروع کیے جانے والے کپڑوں کے برانڈ کے متعلق وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ برانڈ سے کاروبار کا کوئی ارادہ نہیں بلکہ اس کی آمدنی فائونڈیشن کے لیے خرچ کی جائے گی۔اپنے فیس بک پیج پر جاری وضاحتی ویڈیو میں مولانا طارق جمیل نے کہا کہ سال 2000 میں مجھے خیال آیا کہ کوئی ایسا عربی مدرسہ ہو جس میں تعلیم عربی زبان میں دی جائے جس کے بعد میں نے فیصل آباد میں مدرستہ حسنین کے نام سے مدرسے کی بنیاد رکھی۔

انہوں نے کہا کہ بعد میں یہ مدرسہ دس شاخوں میں تقسیم ہوگیا جہاں ہمارے شاگرد ہی پڑھا رہے ہیں اور وہاں عربی میں اسباق پڑھائے جاتے ہیں، جبکہ دوست احباب کے تعاون سے مدرسے کا انتظام چل رہا تھا۔ گزشتہ سال جب کورونا کی وبا ء پھیلی اور کاروبار ٹھپ ہوگئے تو میں نے ساتھیوں کے تعاون سے چلنے والے مدارس بند کر دئیے اور آن لائن کلاسز کا آغاز کیا لیکن مجھے یہ پریشانی ہوئی کہ لوگوں کے کاروبار تو ٹھپ ہوگئے ہیں تو مدرسے کے انتظامات کیسے چلیں گے۔ مولانا طارق جمیل نے کہا کہ جب کورونا نے سب کو متاثر کیا تو میں نے کسی سے تعاون یا چندہ نہ مانگنے کا فیصلہ لیکن مسئلہ یہ بھی تھا کہ مدرسے کے انتظامات کو کیسے چلایا جائے، اس وقت مجھے کاروبار کا خیال آیا جس کی آمدنی کو ہم مدرسے کے لیے خرچ کریں، اس کے بعد چند دوستوں نے مل کر اس کی کوشش کی اور سہیل موڈن نے اس میں اہم کردار ادا کیا اور ہمارے ساتھ تعاون کا ہاتھ بڑھایا، اس کے بعد ہم نے میرے نام سے ’’ایم ٹی جے‘‘برانڈ کے آغاز کا ارادہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ میں کاروبار پیسے بنانے کے لیے نہیں کر رہا، میں نے ساری زندگی پیسہ نہیں بنایا، ہمارا کاروباری ذہن ہی نہیں ہے اور ہم زمیندار لوگ ہیں اور جب سے تبلیغ میں لگا ہو کاروبار نہیں کیا بس 1984 میں ایک بار کپاس کی فصل کاشت کروائی تھی۔انہوں نے کہا کہ اس برانڈ سے کاروبار کا ارادہ نہیں ہے بلکہ اس کی کمائی ایم ٹی جے فائونڈیشن میں لگائوں گا جس کے ذریعے ہسکول اور ہسپتال بنانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ برصغیر میں علما ء کا کاروبار یا تجارت کرنا عیب سمجھا جاتا ہے، نہ جانے یہ بات کہاں سے آگئی ہے، مولوی کا تصور لوگوں سے بھیک مانگنے والے کا بنادیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ میں یہ وضاحت اس لیے کر رہا ہوں کیونکہ ہم نے کسی کاروباری نیت یا کسی کے مقابلے میں یہ کام نہیں کیا، صرف اس نیت سے کام کر رہے ہیں کہ کم از کم میرے مدارس اپنے پائوں پر کھڑے ہوجائیں اور میرے اس دنیا سے جانے کے بعد بھی یہ سلسلہ چلتا رہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز سے مولانا طارق جمیل کے حوالے سے یہ بات سامنے آرہی تھی کہ انہوں نے کاروبار کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور وہ اپنے نام سے برانڈ قائم کر رہے ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اس برانڈ کے ذریعے شلوار قمیض اور کرتے فروخت کیے جائیں گے۔تاہم سوشل میڈیا پر اس حوالے سے سوالات اٹھائے جارہے تھے کہ مولانا طارق جمیل کو اب کاروبار کرنے کا خیال کیوں آیا اور برانڈ لانچ کرنے سے ان کے کیا مقاصد ہیں۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
دفاعی میدان میں پاکستان کی ایک اور کامیابی پاکستان نے کروز میزائل بابر کا کامیاب تجربہ کر لیا۔ آئی ایس پی آر
کراچی سے گرفتار دہشتگرد افغان حساس ادارے کے افسر نکلے بھارتی خفیہ ایجنسی ’’را‘‘سے رابطے میں تھے، موبائل فونز کی ابتدائی فرانزک رپورٹ میں انکشاف۔
بھارت کی دہشتگردوں کی حمایت پر اقوام متحدہ نے پاکستان کا مؤقف تسلیم کرلیا۔ افغانستان میں مقیم ٹی ٹی پی اور جے یو اے کو پاکستان کے لیے لاحق خطرہ تسلیم کیا
پاکستانی کوہ پیما محمد علی سدپارہ کے-ٹو سر کرنے میں کامیاب، پاکستان کی بلند ترین چوٹی پر سبز ہلالی پرچم لہرا دیا گیا
بلوچستان کا دارالحکومت کوئٹہ کے علاقے انسکب روڈ پر کمشنر آفس دھماکے سے لرز اٹھا،ہلاکتوں کا خدشہ، متعدد گاڑیاں تباہ
پاکستان نے زمین سے زمین تک مار کرنے اور جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت والے بیلسٹک میزائل غزنوی کا کامیاب تجربہ کر لیا

سپورٹس
شاہد آفریدی کی بیٹی کیلئے شاہین آفریدی کا رشتہ آنے کی تصدیق اللہ تعالیٰ کی مرضی ہوئی تو یہ جوڑا بھی بن جائے گا ،سابق کپتان کاٹوئٹ
کورونا کے بڑھتے کیسز،پاکستان سپر لیگ 6کو ملتوی کردیا گیا
پی ایس ایل کھیلنا آئی پی ایل سے زیادہ فائدہ مند،ڈیل سٹین کے انٹرویو نے بھارتیوں کو آگ بگولہ کردیا
پی ایس ایل 6ملتوی نہیں ہوگی میچز شیڈول کے مطابق جاری رہیں گے،پی سی بی نے تصدیق کردی
پی ایس ایل چھ، لاہوراور کراچی کا میچ چھ کروڑبھارتیوں نے دیکھا۔۔
میچ ایک گھنٹہ تاخیر کا شکار۔ اسلام آباد یونائیٹڈ کے ایک کھلاڑی کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا

Copyright © 2020 DailyQaim. All Rights Reserved | Privacy Policy