Wednesday May 22, 2024

جنوبی افریقہ کے صد کرپشن الزامات پر مستعفی ہوگئے۔۔23سالہ اقتدار میں کیا بد عنوانیاں ہوئیں؟؟حیران کن انکشافات

پریٹوریا(مانیٹرنگ ڈیسک)جنوبی افریقہ کے صدرجیک زوما نے کرپشن الزامات پر بالاآخر اپنے عہدے سے استعفی دیدیا ہے جبکہ صدر زوما کے استعفی دینے کے بعد حکمران پارٹی نے نئے صدر کاانتخاب کرتے ہوئے سرل راما فو کو ساوتھ افریقہ کا نیا صدر نامزد کر دیا۔برطانوی میڈیانے دعویٰ کیا کہ جیکب زوما کے مستعفیٰٰ ہونے کے بعد حکمران جماعت

افریقی نیشنل کانگریس نے راما فوسا کو نیا صدر منتخب کرلیا ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق نئے صدر کو ملک کے بحرانوں سے نمٹنے کے لیے شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔ساوتھ افریقہ میں نسل پرست حکومت کا خاتمہ ہوئے 23برس گزرچکے ہیں اس کے باوجود ملک میں وسائل ،پیداوار اور دولت کثرت سے باقی ہے لیکن ساتھ ہی لوگوں میں ناقابلیت ، تفریق اور غربت بھی موجود ہے اگر چہ اے این سی حکومت نے لاکھوں لوگوں کو بنیادی سہولت گھربار اور دیگر فراہم کیا ہے لیکن اس کے باوجود وہ توقعات پر پورا نہیں اترسکے۔ہزاروں کی تعداد میں لوگ آج بھی بغیر بجلی کے زندگی گزار رہے ہیں سینیٹیشن کا نظام تہس نہس ہوچکا ہے، اسکول اور ہیلتھ کیئر کی بنیادی سہولیات بھی میسر نہیں ہیں، ایک حالیہ سروے کے مطابق ساوتھ افریقہ میں 10میں سے 8بچے باضابطہ غیر تعلیمی یافتہ نکلتے ہیں جس کی وجہ سے جرائم کی شرح دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔ساو?تھ افریقہ کے دوسرے بڑے شہر کیپ ٹاو?ن میں پانی کی کمی کا امکان بڑھ گیا ہے ، حکومتی رپورٹ کے مطابق 2002سے2016تک بے روزگاری 27 اعشاریہ 7فیصدبڑھ گئی ہے جبکہ ملک میں 68فیصد نوجوان طبقہ ہے ، معاشی صورتحال بھی تباہ کن ہے ۔صدر زوما کا استعفیٰ ملک میں بحران چھوڑ گیا ہے نئے آنے والے صدر کے لیے ملک میں غیر ملکی سرمایاکاری لانا بڑا چیلنج ہوگ

FOLLOW US